ضامن بننا اسے استاد بنائے یا فیض دین پائے۔
ضامن ہونا جس کا ضامن ہو اسے فائدہ پہنچائے۔
ضامنی دینا رنج و غم میں مبتلا ہو ۔ فکر و اندیشہ دامن گیر ہو۔
ضائع مال ہونا دین کی ترقی کا باعث ہے استقامت عطا ہو۔
ضبط کرنا غم و اندوہ سے نجات پائے۔ مدبر و سیاست دان ہو۔
ضد کرنا نام و نمود اور دنیاوی شہرت حاصل ہو۔
ضدی دیکھنا کسی سے نقصان اٹھائے پریشان حال ہو۔
ضرب اللہ اللہ کی لگانا ظاہرداری سے کام لے ریاکار ہو۔
ضرب سکہ پر لگانا لوگوں میں بدنام ہو۔ ذلت خوری اٹھائے۔
ضرب لگانا فخریہ الفاظ بولے غرور و تکبر کا پتلا ہو۔
ضرورت محسوس کرنا حرص و طمع زیادہ ہو۔ لالچ بے فائدہ ہو۔
ضرورت مند دیکھنا طمع نفسیاتی خواہشات کا شکار ہو۔ مگر نامراد رہے۔
ضریع (قبر تعزیہ) دیکھنا فکر عاقبت غالب رہے بخشش کا طالب رہے۔
ضریع بنانا یا کھودنا تنگی رزق و دولت ہو گناہوں سے توبہ کرے عاقبت اچھی ہو۔
ضریع پر مقبرہ بنانا جتنا خوبصورت بنائے اسی قدر ریاکار ہو ایمان سے خالی ہو۔
ضریع کو مسمار کرنا موت کو بھول کر دنیا کے کاروبار میں مشغول ہو۔
ضعف آنکھ کو پڑنا دین میں کمزور ہو اسلام کا چور ہو۔
ضعف پڑتے دیکھنا عزت مرتبہ کی ہو تنزل پائے۔
ضعف سر کو ہونا دنیاوی عزت میں کمی آئے بے عزت و بدنام ہو۔
ضعیف سے کچھ لینا کہنہ اشیاء جمع کرے یا نچلے درجے کا کام کرے۔
ضعیف(بوڑھا) دیکھنا دنیاوی کمزوری کا باعث ہے۔
ضمانت دینا بیمار ہو تو صحت یاب تنگ دستی سے خلاصی پائے۔
ضیافت کا انتظام کرنا سکول یا مدرسہ جاری کرے خادم الناس ہو۔
ضیافت کھانا مال و دولت پائے راحت خوشی نصیب ہو عزت و بزرگی پائے۔
ضیافت کرنا لوگوں کو فائدہ پہنچائے یا ہدایت و تعلیم پائے۔
ضیعف سے ملنا رزق یا کاروبار میں کمی واقع ہو ارادہ متزلزل رہے۔
ٹ ت پ ب ا آ
د خ ح چ ج ث
ژ ز ڑ ر ذ ڈ
ظ ط ض ص ش س
گ ک ق ف غ ع
ھ ہ و ن م ل
ے ی ء
Menu