عمومی مضامین˛Mixed essay

نکتہ فکر. . . . مکروہ دھندہ

Posted On مارچ 6, 2020 at 3:41 شام by / No Comments

نکتہ فکر

مکروہ دھندہ

باوجوداس کے کہ میرا اپنا تعلق بلکہ بہت گہرا تعلق علوم مخفی کے ساتھ ہے۔ مگر بعض اوقات ایسی صورت حال پیدا ہو جاتی ہے کہ اس حوالے سے کئے گئے بعض افرادکے کام کو درست کہنا یا اس کے لیے گنجائش نکالنا مشکل ہی نہیں ناممکن ہو جاتا ہے۔

چند دن قبل ایک صاحب نے عملیات و جفر کے موضوع پر ایک کتاب پیش کی۔ کتاب کی ورق گردانی طبیعت پر جس قدر گراں گزری یہ میں ہی جانتا ہوں۔ کتاب ہذا میں حضرت ابوبکر‘ حضرت عمر‘ حضرت عثمان اور حضرت علی رضی اللہ عنہ سے منسوب کر کے عجب طلسماتی تعویذ و نقوش دئیے گئے تھے کہ ان صحابہ رسول نے اِن طلسمی تعویذوں کے یہ یہ فوائد تحریر کیے ہیں۔ مجھے سمجھ نہیں آئی کہ صاحب کتاب نے کیا کتاب کو فروخت کرنے کے لیے ان صحابہ اکرام کے ناموں کو بیچنے کی مذموم کوشش کی ہے یا اس کے دماغ میں کچھ اور فتور ہے؟

کسی بھی مستند حوالے سے یہ ثابت نہیں کیااس بات کا معمولی سا بھی ثبوت نہیں ملتا کہ صحابہ اکرام ایسے نقوش لکھا کرتے تھے۔ صحابہ اکرام کی شان اس سے کہیں بڑھ کر تھی۔ جو بھی فرد کسی بھی نقش یا تعویذ کو کسی بھی صحابی سے منسوب کرتا ہے۔ بالیقین نہ وہ صحابہ کی عزت میں اضافہ کر رہا ہے نہ علم کی کوئی خدمت کر رہا ہے۔ ایسے لوگ صرف اور صرف اپنی دوکان داری چمکانے کے چکر میں ہیں اور کچھ بھی نہیں۔
میری تمام قارئین سے درخواست ہے کہ وہ یہ بات اپنے ذہن میں مکمل یقین کے ساتھ قائم کر لیں کہ کسی بھی صحابی نے کبھی بھی کسی بھی تعویذ یا طلسمی نقش کی تعلیم نہیں دی۔ نہ ہی کسی مستند حوالے سے ایسی کسی بات کی شہادت ملتی ہے۔ سو ایسے لوگوں سے محتاط رہیں یہ اللہ کے نیک بندوں کو دنیاوی مقاصد کے لیے استعمال کرنے کا مکروہ دھندہ کر رہے ہیں۔ سو ایسے لوگوں اور ایسی کتب سے دور رہیں اور اپنے ایمان کو بھی سلامت رکھیں۔ کیونکہ اس قسم کے نقوش کے ساتھ جو کچھ بھی تحریر کیا جاتا ہے وہ بھی ایمان میں خلل کا باعث بن سکتا ہے۔
اللہ ہم سب کو محفوظ رکھے اور اپنی رحمتیں نازل فرمائے۔

دعا گُو
خالد اسحاق راٹھور

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے